اذان سـننا اور اس کا جــواب دیــنا

ایک مرض یہ ہے کہ لوگ نہ تو اذان سنتے ہیں، اور نہ اذان کا جواب دیتے ہیں، اور نہ ہی اذان کے بعد دعاء پڑهتے ہیں، یہ
آج اگر چراغ لے کر بهی ایسے لوگوں کو تلاش کریں گے تو کوئی نہیں ملےگا, زمانے سے برکت اٹھ گئ, اسی لیے طرح طرح کی مصیبتیں اور آفات اور عذاب ہم پر آرہے ہیں, اللہ تعالی کے نام کی عظمت باقی نہیں رہی,

اللہ تعالی ہم سب کو اصلاح کی توفیق عطاء فرماۓ……آمین

مرض عوام اور خواص سب کے اندر پایا جارہا ہے، یہ سمجهتے ہی نہیں کہ ہمارے ذمے اذان سننا بهی ہے…..اب تو تلاش کرنے سے بهی ایسے لوگ نہیں ملتے ، لیکن میں نے کسی زمانے میں یہ دیکها ہے کہ عورتیں گهر کے کام کاج میں مشغول ہیں, لیکن جیسے ہی اذان کی آواز کان پر پڑتی تو کام سے جاتیں اور اہتمام سے اذان کو سنتیں….اس زمانے میں بےپرده عورتیں بهی سر پر دوپٹہ رکهتی تهیں، اور اگر کبهی سر پر دوپٹہ نہیں ہوتا تو اذان کی آواز سن کر فورا” دوپٹہ سر پر رکھ لیتی تهیں….بعض کاشت کاروں کو دیکها کہ سر پر گهاس کا گٹهہ اٹها کر لےجارہے ہیں، جو کافی وزنی ہوتا، لیکن جب اذان کی آواز سنتے تو وہیں رکھ جاتے , اسی بوجھ کے ساتھ کهڑے ہوگۓ, جب اذان جتم ہوتی پهر آگے چلتے,
Enhanced by Zemanta
Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s