کسبِ حلال کے انسانی زندگی پر اثرات

میرے بیٹے کی پیدائش کے دن ہی سے طبیعت ٹھیک نہیں تھی.. اسے دمہ تھا , سانس اکھڑ جاتا تھا.. اپنے علاقے سمیت تمام ڈاکٹروں حکیموں سے علاج کروا کروا کر تھک گیا.. بالآخر اللہ پاک کی رضا سمجھ کر ہم دونوں میاں بیوی بیٹھ گئے کہ شاید ہمارے بچے کی زندگی اسی طرح بسر ہو گی..
لیکن بھلا ماں باپ کہاں خاموش ہو کر بیٹھ سکتے ہیں.. جس کسی نے بھی کسی حکیم ، سنیاسی ، ڈاکٹر کا بتایا , بھاگ پڑے.. وقتی طور پر تو فرق آجاتا مگر جیسے ہی دوائی ختم ، مرض پھر شروع..
میرے بڑے بھائی ایک ضروری کام کے سلسلے میں یہاں میرے گھر تشریف لائے تو میں نے اپنے بیٹے محسن کو ان کی گود میں ڈال دیا اور تقریباً رو پڑا اور گزارش کی کہ میرے لیے اور میرے بیٹے کیلئے دعا کریں کہ اللہ پاک مجھے ہمت دے اور محسن کو صحت دے..
انہوں نے چند لمحوں تک مجھے اور میرے بیٹے کو غور سے دیکھا اور کہنے لگے کہ حلال رزق پر قناعت کرو , سب ٹھیک ہو جائے گا.. (میں ان دنوں بطور محرر تھا) میں نے اُن سے وعدہ کیا کہ میرا بیٹا ٹھیک ہو جائے تو میں رزق حلال ہی سے گزارہ کروں گا.. انہوں نے کہا کہ محسن تبھی ٹھیک ہو گا جب تم ابھی سے میرے سامنے حلال رزق کمانے کا وعدہ کرو.. روکھی سوکھی کھا لو لیکن 
حرام نہ لو..
اور واقعی میں نے عزم کر لیا.. تب سے اللہ پاک نے دوائیوں میں بھی برکت ڈالی اور محسن ٹھیک ہونے لگا..
قارئین محترم ! آج میرا بیٹا 11سال کا ہو چکا ہے.. الحمد للہ اب میرے 6 بچے ہیں.. میرے گھر میں واقعی بہت سکون ہے.. کوئی بیماری نہیں ہے کوئی ٹینشن نہیں ہے.. الحمدللہ رزق حلال کا اپنا الگ نشہ ہے.. یقین نہیں تو آزما کر دیکھ لیں..
گھر میں اگر حرام کا مال آئے تو اپنے ساتھ بہت ساری بیماریاں اور مصائب لے کر آتا ہے اس لیے اس سے بچنا بہت ہی ضروری ہے..
تحریر : نامعلوم…….

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s